10 امراض جن کی پیشگوئی ہاتھوں سے ممکن۔

Noor Health Life

      ہاتھوں سے کئی امراض کی علامات کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے۔

      انگلی کی لمبائی سے لے کر گرفت کی مضبوطی تک ہمارے ہاتھ کئی طرح کے طبی خطرات کی پیشگوئی کرتے ہیں۔

      مگر کیا آپ کو معلوم ہے کہ ہمارے ہاتھوں کی چند عام چیزیں کس حد تک صحت کو لاحق خطرات کی نشاندہی کرتی ہیں؟

      یہاں ایسے ہی علامات کا ذکر کیا گیا ہے جو طبی سائنس کے مطابق ہمارے ہاتھوں کے ذریعے ظاہر ہوتی ہیں۔

      انگلی کی لمبائی : جوڑوں کے درد کا خطرہ

      اگر خواتین کی تیسری انگلی شہادت کی انگلی سے لمبی ہو، جو عام طور پر مردوں میں ہوتا ہے، تو ان میں گھٹنوں کے جوڑوں کے درد کی تکلیف لاحق ہونے کا خطرہ دوگنا زیادہ ہوتا ہے۔ طبی جریدے آرتھریٹز اینڈ رہیوماٹزم میں شائع ایک تحقیق کے مطابق اس کی ایک ممکنہ وجہ ہارمون ایسٹروجن کی کم سطح ہوسکتی ہے۔

      لرزتے ہاتھ : پارکنسن (رعشے) امراض کی علامت

      لرزتے ہاتھ کئی بار بہت زیادہ کیفین کے استعمال یا مخصوص ادویات کے مضر اثرات کا نتیجہ بھی ہوتے ہیں۔ مگر ایسا صرف ایک ہاتھ میں ہو تو فوری طور پر ڈاکٹر سے رجوع کرنا زیادہ بہتر ہوتا ہے۔ صرف ایک ہاتھ کا لرزنا پارکنسن امراض کی پہلی علامت ہوسکتی ہے۔

      ناخن کی رنگت : گردوں کے امراض

      ایک تحقیق کے دوران گردوں کے سنگین امراض میں مبتلا سو مریضوں کا جائزہ لیا گیا تو یہ بات سامنے آئی کہ 36 فیصد کے ہاتھوں کے ناخن دو رنگے (ناخن کا نچلا حصہ سفید اور اوپری بھورا) تھا۔ ناخن کی اس حالت کی ممکنہ وجہ مخصوص ہارمون کا اضافہ اور خون کی شدید کمی ہوسکتی ہے اور یہ دونوں چیزیں گردوں کے امراض کا حصة ہوتی ہیں۔ اگر آپ کو اپنے ناخنوں پر دو رنگ نظر آئے یا وہ سیاہی مائل ہوجائیں تو فوری طور پر ڈاکٹر سے رجوع کریں کیونکہ گہری رنگت جلد کے کینسر کی بھی علامت ہوسکتی ہے۔

      گرفت کی مضبوطی : دل کی صحت

      ایک کمزور گرفت ہارٹ اٹیک یا فالج کے دورے اور ان سے بچنے کے کم امکانات کی پیشگوئی ثابت ہوسکتی ہے۔ سترہ ممالک کے رہائشیوں پر ہونے والی ایک تحقیق میں یہ بات سامنے آئی کہ گرفت کی مضبوطی قبل از وقت موت کی بلڈ پریشر کے مقابلے میں زیادہ بہتر پیشگوئی کرسکتی ہے۔ محققین کے مطابق گرفت کی مضبوطی سے مجموعی طور پر مسلز کی مضبوطی اور فٹنس کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے اور اس حوالے سے جسمانی سرگرمیوں کی تجویز دی جاسکتی ہے تاکہ امراض قلب سے بچا جاسکے۔

      انگلیوں کے نشانات : ہائی بلڈ پریشر

     نور ہیلتھ زندگی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی کہ جن لوگوں کی ایک یا اس سے زائد انگلیاں چکر دار فنگر پرنٹس کی حامل ہو تو وہ ممکنہ طور پر ہائی بلڈ پریشر کے شکار ہوسکتے ہیں۔ اس شخص کی جتنی انگلیاں چکر دار ہوں گی اتنا ہی زیادہ بلڈ پریشر بھی ہوگا۔

      ہاتھوں میں پسینہ: پسینے کا زائد اخراج

      اگر ہاتھوں پر بہت زیادہ پسینہ آتا ہے تو یہ تھائی رائیڈ امراض کے ساتھ ساتھ جسم سے ضرورت سے زیادہ پسینے کے اخراج کا مسئلہ بھی ہوسکتا ہے، جس میں پسینہ خارج کرنے والے غدود زیادہ متحرک ہوجاتے ہیں۔ اکثر افراد کو اس مسئلے کا سامنا جسم کے ایک یا 2 حصوں میں ہوتا ہے جیسے بغلیں، ہتھیلی یا پیر۔ ڈاکٹر اس کا معائنہ کرکے علاج تجویز کرسکتے ہیں۔

      زرد ہاتھ: خون کی کمی۔

      اینیمیا یا خون کی کمی کی مختلف اقسام ہوتی ہے جیسے بہت زیادہ یا دائمی اینیمیا وغیرہ، تاہم خون کی کمی کی قسم جو بھی ہو، اس کے نتیجے میں متاثرہ فرد کے جسم میں خون کے صحت مند خلیات کی مقدار اتنی نہیں ہوتی جو آکسیجن کی فراہمی کا کام کرسکیں۔ یہی وجہ ہے کہ اس مرض کی سب سے عام علامت جلد میں پیلاہٹ ابھر آنا ہوتی ہے خصوصاً ہاتھوں کی جلد اور ناخنوں میں زردی جھلکنا۔

     پھیپھڑوں کے امراض

      کلب نیل یا فنگر سے مراد یہ ہے کہ ناخنوں کی بنیاد نرم پڑجائے جبکہ ناخن کے آس پاس کی جلد چمکدار ہوجائے، اسی طرح ناخن اطراف سے معمول سے زیادہ مڑجائیں جبکہ انگلیوں کے سرے پہلے سے زیادہ بڑے ہوجائیں، یہ علامت عام طور پر پھیپھڑوں کے امراض کی جانب اشارہ کرتی ہے کیونکہ انگلیوں یا ناخنوں کو آکسیجن کی کمی کا سامنا ہوتا ہے۔ ویسے یہ علامت خون کی شریانوں کے امراض، جگر کے امراض کی نشانی بھی ہوسکتی ہے۔

     ناخنوں کی یہ ساخت کینسر کی علامت تو نہیں؟

     جگر کے امراض

      جلد پر سرخ داغ ابھر آنا متعدد امراض کی نشانی ہوسکتے ہیں، مگر عام طور پر یہ جگر کے امراض کے مسئلے میں زیادہ عام علامت ہوتی ہے۔ کچھ لوگوں کو ہاتھوں کی اس کیفیت کے ساتھ ہتھیلی پر زیادہ گرمائش کا تجربہ ہو، تو یہ جگر میں خرابی کا عندیہ ہوسکتا ہے۔انگلیوں کے جوڑوں میں درد ہوتا ہے – وجوہات اور علاج

     ماہرین اس حقیقت کو نوٹ کرتے ہیں کہ آج بہت سے امراض “چھوٹے” ہوتے ہیں، یعنی آج. راستہ، صرف بوڑھے لوگوں کے لئے منفی، نوجوانوں کو تیزی سے متاثر کر رہے ہیں. لہذا، خواتین کی ایک بڑی تعداد مشترکہ بیماریوں کا سامنا کرتی ہے، اور ڈاکٹروں کو بہت سے شکایتیں انگلیوں کے جوڑوں میں درد میں آتے ہیں. آتے ہیں، اس وجہ سے کہ انگلیاں انگلیوں کی انگلیوں کے جوڑوں کو نقصان پہنچا سکتا ہے، اور اس طرح کے علاج کی ضرورت ہوتی ہے.

     انگلیوں کے جوڑوں میں درد کیوں ہوتا ہے؟

     انگلیوں کے جوڑوں میں درد تکلیف دہ عوامل کی وجہ سے ہوسکتی ہے: ھیںچنے یا لٹکھڑے کی ٹوکری، معاوضہ، فریکچر، وغیرہ. ایسے معاملات میں، ایک اصول کے طور پر، وجہ واضح ہے. عارضی درد کبھی کبھی غیر منطقی یا طویل جسمانی اضافے کے ساتھ منسلک کیا جاتا ہے، ایک غیر آرام دہ پوزیشن میں ہاتھوں کی موجودگی. اکثر انگلیوں کے جوڑوں میں درد، جیسے جسم کے دیگر جوڑوں میں، حملوں کے دوران خواتین میں کیلشیم کی کمی، اضافی ہارمون آرام، اعصاب کی پنچنے کی وجہ سے ہو سکتا ہے.

     لیکن اگر انگلیوں کے جوڑوں میں درد طویل عرصے تک بغیر ہی واضح طور پر واضح وجوہات کی بناء پر فکر مند ہے تو یہ سنگین بیماریوں سے منسلک کیا جا سکتا ہے. اہم لوگوں پر غور کریں:

     اوسٹیوآرتھرس ایک ایسی بیماری ہے جو جسم میں میٹابولک امراض کی وجہ سے ہوسکتا ہے، ہاتھوں، جینیاتی عوامل پر کاروباری بوجھ. اس صورت میں غیر زہریلا جوڑوں کی اخترتی ہوتی ہے، جس میں انگلیوں پر مخصوص ذہنی نوڈلوں کی تشکیل ہوتی ہے.

     ریوومیٹائڈ گٹھائی ایک ساکھاتی آٹومونن بیماری ہے جس میں جسم کے مختلف جوڑوں کو متاثر کیا جاتا ہے، اور اکثر آںوں سے یہ انگلیوں سے شروع ہوتا ہے. اس صورت میں، سوزش نقصان، جوڑوں کے اوپر جلد کی سوزش اور لالچ کے ساتھ، جس میں آہستہ آہستہ موٹا، اختر. اس صورت میں، رات اور صبح میں درد اکثر اکثر تکلیف دہ ہوتی ہے.

     گیٹ میٹاولک بیماریوں کی وجہ سے ایک بیماری ہے جس میں uric ایسڈ کے نمک کے کرسٹل جوڑوں کے اندر جمع ہوتے ہیں. ہاتھ اور پاؤں کے جوڑوں کو متاثر کیا جا سکتا ہے. جب گوتھائی درد بہت شدید ہے، جلتا ہے، جوڑوں کے اوپر جلد کی لہر ہے، نقل و حرکت کی تیز پابندی.

     ریزارٹروز ایک ممکنہ وجہ ہے اگر انگوٹھوں کے جوڑوں، جس میں تابکاری مشترکہ، چوٹ کے ساتھ میٹاوپرپال ہڈی سے منسلک ہوتا ہے. یہ ریاضی انگوٹھے کی جسمانی اوورلوڈ کے ساتھ منسلک ہے اور آسٹیوآرتھرائٹس کی اکثر صورت حال ہے.

     معدنی لگنیٹائٹس (“snapping انگلی”) tendons کے سوزش کے نقصان سے منسلک ایک بیماری ہے، جس کے نتیجے میں لچکدار انگلی کی موٹائی کی توسیع کے ذمہ دار ہیں. یہ اس وجہ سے ہو سکتا ہے کہ انگلیوں کے جوڑوں کو نچوڑنا پڑتا ہے اور جب وہ نابود ہوتے ہیں تو ایک کلک ہوتا ہے.

     زراعت پسندی گٹھ جوڑ جوڑوں کی راہنمائی کی جاتی ہے، جو اکثر ان کی جلد میں ان لوگوں کو جنم دیتا ہے جو پہلے سے ہی پووروریسیوں کی جلد ہوتی ہیں. بیماری کسی بھی انگلی پر اثر انداز کر سکتا ہے، اس کے تمام جوڑوں کو درد، درد، سوزش اور لالچ کا سبب بن سکتا ہے.

     بورسرائٹس انگلیوں کے جوڑوں کی سوزش ہے، ان کے گہا میں مائع کی جمع کے ساتھ. زخموں، انگلیوں پر بوجھ، انفیکشن کی رسائی کی وجہ سے ایک ریاضی پیدا ہوسکتا ہے. اس صورت میں متاثرہ مشترکہ، لالچ کے علاقے میں دردناک سوجن کی تشکیل خصوصیت ہے.

     انگلیوں کے جوڑوں میں درد کا علاج

     غیر منصفانہ طور پر یہ کہنا ناممکن ہے کہ دردناک جوڑوں کو ختم کرنے کی کیا ضرورت ہے. علاج زیادہ تر پر منحصر ہے کیوں ایک ہاتھ کی انگلیوں پر جوڑوں کو چوٹ پہنچایا جاتا ہے، چاہے وہ صدمے یا کسی بیماری کا نتیجہ ہو. لہذا، مناسب تھراپی کی تقرری کے لئے ایک ڈاکٹر سے مشورہ اور جانچ پڑتال کرنی چاہئے.

     زیادہ تر مقدمات میں، اس علامات کے ساتھ، غیر سٹرائڈل اینٹی سوزش منشیات، چاندروپٹیکٹر ، اینٹی بائیوٹیکٹس، پینٹ ڈرلرز، ہارمونز مقرر کئے جاتے ہیں. مساج، فزیو تھراپی کے طریقہ کار، انگلی کے مشقوں کو بھی لے جانے کی ضرورت ہے. کم از کم مریضوں کو سرجیکل مداخلت کی ضرورت ہوتی ہے. یہ علاج کے لئے آزادانہ طور پر علاج کرنے کی سفارش نہیں کی جاتی ہے، اس وجہ سے اس وجہ سے معلوم ہوتا ہے کہ انگلیوں کے جوڑوں درد سے متاثر ہوتے ہیں۔ مزید سوالات اور جوابات حاصل کرنے کے لیے نور ہیلتھ زندگی کے ساتھ ای میل اور واٹس ایپ کر سکتے ہیں۔ noormedlife@gmail.com

Leave a Comment

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s