ناخن کی وہ علامات جو مختلف امراض کا خطرہ ظاہر کریں۔

Noor Health Life

   کیا آپ کو معلوم ہے کہ انگلیوں کے ناخن آپ کی صحت کے بارے میں بہت کچھ بتاسکتے ہیں؟

   جی ہاں یقین کرنا شاید مشکل ہو مگر ڈاکٹر آپ کی صحت کے بارے میں ناخنوں کو دیکھ کر بہت کچھ بتاسکتے ہیں۔

   ویسے تو ناخنوں میں اکثر عمر بڑھنے سے تبدیلیاں آتی ہیں تاہم یہ اچانک اور بہت نمایاں ہوں تو ڈاکٹر سے رجوع کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔

   انگلیوں کے ناخنوں پر یہ سفید نشان کیوں ہوتے ہیں؟

   درج ذیل میں ایسی علامات دی جارہی ہیں جو ناخنوں میں ظاہر ہوں تو طبی مشورہ کرنا ضروری ہوتا ہے۔

   ناخنوں کی رنگت پیلی ہوجانا

   خواتین میں تو نیل پالش کا زیادہ استعمال اکثر ناخنوں کی رنگت کو بدلنے کا باعث بن جاتا ہے تاہم مرد یہ میک اپ پراڈکٹ استعمال نہیں کرتے اور ناخنوں کی رنگت اچانک زرد یا پیلی ہوجائے تو یہ پھیپھڑوں یا لمفائی بافتوں کے مسائل کی نشانی ہوسکتی ہے۔

   سفید ہوجانا

   اگر تو ناخن کا اوپری حصہ سفید ہوجائے تو یہ عام طور پر عمر بڑھنے کی علامت ہوتا ہے، تاہم آپ کسی اور مرض یا طبی مسئلے کا شکار ہیں تو ڈاکٹر سے ضرور رجوع کریں کیونکہ یہ سفید ناخن گردوں، جگر یا امراض قلب کا اشارہ ہوسکتے ہیں۔

   لوگ ناخن کیوں چباتے ہیں؟

   بھوری یا سیاہ لائن آجانا

   ناخن کی سطح پر گہرے بھورے یا سیاہ رنگ کی پٹی کا نمودار ہونا مختلف جلدی مسائل بشمول جلدی کینسر کا نتیجہ بھی ہوسکتا ہے، تو ایسی صورت میں ڈاکٹر سے رجوع کریں تاکہ وہ اس حوالے سے درست تشخیص کرسکے۔

   ناخن اکھڑنا

   اگر ناخن جلد کی سطح سے الگ ہونا شروع ہوجائے تو یہ تھائی رائیڈ امراض، غدود درقیہ کا مرض یا دیگر آٹو امیون امراض کی وجہ سے ہوتا ہے۔

   چمچی نما ناخن

   اگر ناخن کسی چمچ کی طرح اوپر کی جانب خم دار ہوجائیں تو اس کی ممکنہ وجہ جسم میں آئرن کی کمی ہوسکتی ہے۔ناخن آپ کی صحت سے متعلق کیا کہتے ہیں ؟

   ناخنوں کی صحت انسانی مجموعی صحت سے متعلق بہت کچھ بتاتی ہے جسے نظر انداز کر دیا جاتا ہے یا معلومات نہ ہونے کی وجہ سے توجہ نہیں دی جاتی، اگر مندرجہ ذیل 5 علامات آپ کے ناخنوں میں ظاہر ہو رہی ہیں تو فکر مند ہونے کی ضرورت ہے ۔

   طبی ماہرین کے مطابق آسانی سے ناخنوں کا ٹوٹ جانا اور پتلا ہونا کوئی عام بات نہیں ہے بلکہ یہ آپ کی مجموعی صحت سے متعلق اہم علامت ہے۔

   جانیے وہ 5 علامات جو آپ کے ناخن آپ کی مجموعی صحت سے متعلق بتانے کی کوشش کر رہے ہیں ۔

   تھائیراڈ گلینڈ کی خراب کاکرکردگی۔

   اگر آپ کے ناخن با آسانی ٹوٹ رہے ہیں یا پتلے ہیں تو یہ اس بات کی طرف نشاندہی ہے کہ انسان میں موجود تھائیرائڈ گلینڈ بہتر طریقے سے کام نہیں کر رہا ہے، تھائیرائیڈ کے بگڑنے کا مطلب ہے کہ انسانی جسم میں کسی بھی ہارمون کا صحیح وقت پر مطلوبہ مقدار میں اخراج نہیں ہو رہا ہے ۔

   اگر ناخن موٹے ہیں مگر با آسانی خود با خود اکھڑ رہے ہیں یا کھردرے ہو رہے ہیں تو اس کا مطلب ہیں کہ جسم میں ہارمونز مطلوبہ مقدار سے زیادہ خارج ہو رہے ہیں یا وٹامن اے ، سی اور بائیوٹن کی کمی ہے ۔

   پھیپڑوں کی کارکردگی کا خراب ہونا۔

   ناخنوں کا اوپر کی جانب ابھرنا اور گول سطح کی صورت اختیار کرنے کو ‘کلبنگ’ کہتے ہیں، کلبنگ پھیپڑوں کی خراب کارکردگی کی علامت ہے ، اس کا مطلب ہے کہ آپ کے پھیپڑے آکسیجن کی مطلوبہ مقدار حاصل نہیں کر رہے ہیں اور آپ کے خون میں آکسیجن کی مقدار کم ہو رہی ہے ۔

   آپ کو چنبل ہوسکتا ہے۔

   چنبل ایک جلدی بیماری ہے جس میں انسانی خلیوں کی افزائش 10 گنا بڑھ جاتی ہے، یہ بیماری ناخنوں میں بھی ہو سکتی ہے اس اس کی وجہ قوت مدافعت کا کمزور ہونا ہوتا ہے، اس صورت میں ناخن موٹے ، کھدرے اور سفید پڑنے لگتے ہیں ، اس علامت میں درد بھی محسوس ہوتا ہے ۔

   جگر کا غیر مناسب صوتحال میں ہونا۔

   الکوحل کا استعمال کرنے والے افراد میں اکثر جگر کی بیماریاں بڑھ جاتی ہے جس میں سب سے پہلے اُن کے جگر کا غیر مناسب سائز میں بڑھ جانا شامل ہے، ایسی صورت میں ناخنوں پر ہلکے گلابی نشانات بننے لگتے ہیں جو کہ جگر کی خراب کاکردگی کی نشاندہی کرتے ہیں .

   ایک ہیلتھ رپورٹ کے مطابق دنیا کے 68 فیصد افراد کو جگر کا عارضہ لا حق ہوتا ہے، اگر آپ الکوحل کا استعمال نہیں کرتے ہیں اور پھر بھی یہ علامات ظاہر ہوں تو فوراً اپنے ڈاکٹر سے رجوع کریں ۔

   ذیابطیس کی شکایت ہونا۔

   ذیابطیس کا علامات ناخنوں سے ظاہر ہو جاتی ہیں ، اس کے لیے میڈیکل ٹیسٹ کروانے سے پہلے اپنے ناخنوں سے اس کی تشخیص کرسکتے ہیں ، اگر آپ کے ناخنوں کا رنگ پیلا پڑ گیا ہے تو یہ بلڈ شوگر کی نشاندہی ہے جبکہ ناخنوں کے قریب کی جلد اگر لال ہے تو یہ ذیابطیس کے آغاز کی علامت ہے۔ناخن پر پھُپھُوندی کے انفیکشن کے علامات علاج اور احتیاطی تدابیر۔

  یہ بیماری جسے اونکومیکوسیز بھی کہا جاتا ہے، ذیادہ تر بوڑھے لوگوں کو متاثر کرتی ہے۔ ناخن کو اثرانداز کرنے والی پھُپھُوندی کئی اقسام کی ہو سکتی ہے جیسا کہ یاست، مولڈز وغیرہ لیکن سب سے ذیادہ پائی جانے والی پھُپھُوندی کا نام ڈرماٹوفائٹ ہے جو ذیادہ تر انفیکشن کا باعث بنتی ہے۔ ناخن کے یہ انفیکشن ناخن کے نیچے سفید اور پیلے دھبوں کی شکل میں نمودار ہوتے ہیں اور اگر اس کا علاج نہ کرایا جائے تو یہ پورے ناخن کو اپنی گرفت میں لے کر ناخن کے سخت ہو کر گرنے کا باعث بھی بن سکتی ہے۔

  علامات میں ناخن سے گندی بدبو آنا، سخت اور اکھڑتا ہوا ناخن اور ناخن کا پیلا یا بھورا ہو جانا شامل ہیں۔ خدشاتی عناصر میں قوت مدافعت کی کمی، بڑھتی ہوئی عمر، ذیادہ پسینہ آنا، ناخنوں کے انفیکشن اور گندی جگہ پر ننگے پاوں چلنا ذیادہ اہم ہیں۔ علاوہ ازیں، شوگر کے مریضوں میں ٹانگوں تک خون کی کم رسائی ان افراد میں اس مرض کی ذیادتی کا باعث ہے۔ علاج میں بآسانی دستیاب سے لیکر ڈاکٹر کی رسید پر والی ادویات تک تمام آپشن موجود ہیں۔

  احتیاطی تدابیر

  ١. اپنے ہاتھوں اور پاوں کی باقاعدہ صفائی

  ٢. ناخنوں کو اچھے سے تراشا جائے اور ٹیڑھے میڑے کونے کھدرے سے پرہیز کیا جائے

  ٣۔ ناخن تراش کو اچھے سے صاف کیا جائے

  ٤. بند جوتے پہنتے ہوئے جرابیں لازمی پہنی جائیں

  ٥. اگر کسی سیلون یا پارلر سے ناخن کا علاج کرایا جائے تو اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ تمام آلات صاف ستھرے ہیں۔ مزید سوالات اور جوابات حاصل کرنے کے لیے نور ہیلتھ زندگی کے ساتھ ای میل پر رابطہ کر سکتے ہیں ۔ noormedlife@gmail.com

Leave a Comment

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s