جسم کے مختلف حصوں پر دانے الگ الگ بیماریوں کی نشاندہی کرتے ہیں

Noor Health Life

۔
                                                             ہمارے جسم پر دانے نکلنے کا عمل قدرتی ہے لیکن اگر یہ کسی مخصوص حصے پر زیادہ نکلنے لگیں تو یہ کسی بیماری کی نشاندہی کرتے ہیں۔آئیے آپ کو جسم کے مختلف حصوں پرنکلنے والے دانوں اور ان سے جڑی بیماریوں کے بارے میں بتاتے ہیں۔

    گردن

    اگر اس حصہ پر دانے نکلنے لگیں تو یہ ایڈرینل گلینڈ میں خرابی کی طرف اشارہ ہے۔اس کی ایک وجہ بہت زیادہ ذہنی دباؤ اور میٹھے کا زیادہ استعمال ہے۔

    کندھے

    بہت زیادہ کام کا دباؤاور تناؤ کی وجہ سے جسم کے اس حصے پر بھی دانے نکل آتے ہیں۔یہ کمزور مدافعتی نظام کی جانب بھی ایک اشارہ ہوتا ہے لہذا پریشان نہ ہوں اور اپنے آپ کو پرسکون رکھیں۔

   نور ہیلتھ زندگی کی طرف سے یہ کوشش کی جا رہی ہیں کہ آ چھے سے آ چھے معلومات آ پ تک پہنچائے اور نور ہیلتھ زندگی کے ساتھ بڑے بڑے ڈاکٹرز ۔ سرجن۔ کنسلٹنٹ۔ پروفیسرز۔ کام کر رہے ہیں نور ہیلتھ زندگی غریبوں کی مدد کرتا ہے اور آ پ حضرات سے بھی عرض ہے کہ آ پ بھی اس کام میں حصہ لے اور نور ہیلتھ زندگی کا ساتھ دیں۔ مزید پڑھیں۔

    سینہ

    اگر دانے سینے پر نکلیں تو اس کامطلب ہے کہ آپ کا نظام انہضام صحیح طریقے سے کام نہیں کررہا اور آپ کو اپنی خوارک میں تبدیلی لاناہوگی۔

    بازو

    اس جگہ دانے نکلنے کی وجہ وٹامنز کی کمی ہے۔اس کا یہ مطلب ہرگز نہیں کہ آپ وٹامن کے لئے ادویات کا استعمال شروع کردیں بلکہ خوراک کے ذریعے اس کمی کو پورا کریں۔

    پیٹ

    اس جگہ دانے کی وجوہات جسم میں شوگر لیول کا بڑھ جانا ہے۔لہذا زیادہ چینی اور بریڈ کا استعمال نہ کریں بلکہ سبزیوں اور پھلوں پر اکتفا کریں۔

    ٹانگوں سے اوپر اور دھڑ سے نیچے

    اگر آپ کوئی ایسا صابن استعمال کررہے ہیں جو آپ کی جلد کو موافق نہ آئے تو اس حصے پر دانے نکل آتے ہیں لہذا اپنے صابن کو چیک کریں۔اس کی ایک اور وجہ جلد کا انفیکشن بھی ہوسکتا ہے۔

    کمرکا اوپر اوردرمیانی حصہ

    اگر آپ کی نیند پوری نہیں ہورہی تو اس جگہ دانے نکل آتے ہیں ،اسی طرح آپ حراروں سے بھرپورغذا کا استعمال کررہے ہیں۔

    چوکلے

    یہاں دانے نکلنے کی وجہ بھی نظام انہضام میں خرابی ہے۔یہ اس بات کی طرف بھی اشارہ کرتا ہے کہ آپ اچھی خوراک استعمال نہیں کررہے۔ دانے بننے کی وجوہات اور علاج۔

   اکثر ہم جان نہیں پاتے کی ہمارے چہرے پر دانے کیوں بننے لگے ہیں۔دانت بننے کی کوئی ایک خاص وجہ نہیں لیکن اس کی کئی وجوہات ہو سکتی ہیں۔جن میں سے کچھ وجوہات اور ان کے علاج درج ذیل ہیں۔آئیے ان کے بارے میں آپ کو قدرے تفصیل سے بتائیں۔

   متوازن غذا کی کمی اور خالص کاربو ہائیڈریٹ کا زیادہ استعمال کسی بھی عمر میں ایکنی کی وجہ بنتا ہے۔اگر آپ اپنی غذا میں جنک فوڈ اور شکر کا بہت زیادہ استعمال کرتے ہیں تو دانے بن جانا ایک قدرتی عمل ہے۔اس سے بچنے کے لیے متوازن غذا اور لو گلائی کیمک انڈیکس والی غذا کا استعمال ضروری ہے۔تحقیق دانوں کے مطابق خون میں انسولین کی وافر مقدار ہارمونز کو زیادہ آئل اور سوزش والے فولیکلز پیدا کرنے پر مائل کر سکتی ہے۔اپنی غذا کے گلائی کیمک انڈیکس پر نظر رکھتے ہوئے آپ بھی اپنی غذا کو صحت مند اور متوازن بنا سکتے ہیں۔

   جدید ٹیکنالوجی کی ایک تھیراپی جسے بلیو لائٹ تھیراپی کہا جاتا ہے چہرے کے دانوں کو ختم کر نے کے لیے آج کل استعمال کی جا رہی ہے۔یہ طاقتور نیلی شعاعیں فولیکلز کے ذریعے جلد میں داخل ہو کر بیکٹیریا کا خاتمہ کرتی ہیں۔اس کی وجہ سے جلد پر سرخی آ سکتی ہے لیکن یہ وقتی ہوتی ہے،لہٰذا اگر آپ کا بجٹ اجازت دے تو یہ تھیراپی دانوں کو ختم کرنے اور صاف جلد کے حصول کے لیے بہترین ہے۔

   ایک بہت ہی مشہور اور بینزوئل پر آکسائڈ کے مقابلے میں ہلکا ٹی ٹری آئل ہر عمر میں ہر طرح کی ایکنی کے علاج کے لیے مفید ہے۔ٹی ٹری آئل میں قدرتی طور پر اینٹی سیپٹک خصوصیات شامل ہیں جو بند مساموں کوصاف کرنے کے ساتھ جلد کی سطح پر زائد تیل کے اخراج کو بھی روکتا ہے،اور قدرتی طور پر جلد کی سوزش کو بھی کم کرتا ہے۔یہ تیل بہت سے لوشن،فیس واش اور صابن میں بھی استعمال کیا جاتا ہے۔

   ماہرین جلد اور ماہرین صحت کے مطابق اپنی غذا میں نمک کا استعمال کم سے کم کریں۔نور ہیلتھ زندگی کا کہنا ہے کہ ایکنی ہونے کی ایک بڑی وجہ سوڈیم کا زیادہ استعمال ہے۔سوڈیم کا استعمال کم کرنے کے لیے اپنی بنائی غذائیں خریدتے وقت اور باہر کا کھانا کھاتے وقت اس بات کا خاص خیال رکھیں ۔آپ کے لیے بہتر ہو گا کہ روزانہ پندرہ سو ملی گرام سے کم سوڈیم کا استعمال کیا جائے۔

   ذہنی دبائو ہارمونز کی کارکردگی پر منفی اثر ڈالتا ہے۔ذہنی تنائو کا جلد پر براہِ راست تو کوئی اثر نہیں ہوتا لیکن جب بھی آپ پریشان ہوتے ہیں تو آپ کی جلد پر دانوں کے نشان نمودار ہو جاتے ہیں۔ذہنی تنائو کے ہار مونز سوزش کو بڑھا دیتے ہیں جو جسم میں آئل خارج کرنے والے غدود کو بھی متاثر کرتے ہیں۔ذہنی دبائو کو کم کرنے کے لیے مراقبہ،ورزش یا کوئی اور طریقہ استعمال کیا جا سکتا ے جو آپ کی ذہنی کیفیت کو سکون پہنچا سکے۔

   بہترین نتائج کے لیے اپنی غذا اور طرزِ زندگی میں مناسب تبدیلی کے ساتھ کسی اچھے ماہرِ جلد سے رابطہ بھی ضروری ہے ۔وہ امراض جو جلد سے ظاہر ہوتے ہیں۔

   کچھ امراض کا سب سے پہلے اشارہ جلد پر ظاہر ہوتا ہے۔

   جلد انسانی جسم کا سب سے بڑا عضو ہے مگر کیا آپ کو معلوم ہے کہ یہ امراض کی پیشگوئی بھی کرتی ہے؟

   جی ہاں کچھ امراض کا سب سے پہلے اشارہ جلد پر ظاہر ہوتا ہے۔

   مگر کیا آپ ان علامات سے واقف ہیں جو جلد مختلف امراض کے لیے ظاہر کرتی ہے؟

   برص

   عام طور پر برص نامی اس مرض کے بارے میں یہ خیال عام ہے کہ یہ مچھلی کھانے کے بعد دودھ پینے کا ری ایکشن ہوتا ہے، تاہم طبی سائنس اس کو رد کرتی ہے۔درحقیقت یہ اس وقت لاحق ہوتا ہے جب جلد کو اس کی قدرتی رنگت دینے والے خلیات مخصوص رنگدار مادہ کی تیاری چھوڑ دیتے ہیں۔جلد پر نمایاں سفید دھبوں کا نمودار ہونا درحقیقت جسمانی دفاعی نظام کی جانب سے جلدی خلیات پر حملہ کرنا ہوتا ہے جو جلد کو رنگ دینے والے جز میلانن پر ہوتا ہے، تاہم یہ دیگر آٹو امیون امراض جیسے تھائی رائیڈ امراض کی علامت بھی ہوسکتا ہے۔

   سوزش جلد

   خشک، کھجلی اور جلد پر سرخ نشانات عام طور پر گردن یا کہنیوں کے پاس ظاہرتے ہیں، یہ کافی عام جلدی مرض ہے جو بچوں، بڑوں دونوں کو ہوسکتا ہے، مگر یہ ذہنی صحت میں خرابی کی علامت بھی ہوسکتا ہے۔ ایک امریکی تحقیق کے مطابق ڈپریشن یا تناﺅ کے ذہنی عارضوں کے شکار افراد میں یہ جلدی مرض نمودار ہوتا ہے، تاہم جلد کی سوزش کا علاج کرانے سے ذہنی صحت میں بھی بہتری آتی ہے۔

   کھلے زخم

   بلڈ شوگر طویل عرصے تک بڑھی رہے تو اس کے نتیجے میں خون کی گردش متاثر اور اعصاب کو نقصان پہنچتا ہے، اس کے نتیجے میں جسم کے زخم بھرنے کی صلاحیت متاثر ہوتی ہے، خاص طور پر پیروں میں یہ زخم نظر آتے ہیں جنھیں ذیابیطس کا ناسور بھی کہا جاتا ہے۔

   چنبل

   اس جلدی مرض میں جلد پر چھلکے سے نمودار ہوجاتے ہیں جبکہ کھجلی اور خارش بھی ہوتی ہے، مگر یہ کچھ سنگین طبی مسائل کی جانب اشارہ بھی کررہے ہوتے ہیں۔ طبی ماہرین کے مطابق اس جلدی کیفیت کے شکار افراد میں دل کے امراض کا امکان 58 فیصد جبکہ فالج کا خطرہ 43 فیصد زیادہ ہوتا ہے۔ ماہرین نے بتایا کہ چنبل اور خون کی شریانوں میں خون کا جمنا ورم کے باعث ہوتا ہے اور یہ چیز دونوں کو آپس میں جوڑتی ہے۔

   گلابی دانے یا وردیہ

   اس مرض میں جلد سرخ ہوجاتی ہے اور گلابی رنگ کے دانے نکل آتے ہیں، اکثر افراد اس کا علاج نہیں کراتے کیونکہ وہ اسے نقصان دہ نہیں سمجھتے، مگر ایک نئی تحقیق کے مطابق یہ کیفیت خواتین میں ڈیمینشیا کے مرض کا خطرہ 28 فیصد تک بڑھا دیتی ہے، خاص طور پر اگر عمر 50 یا 60 سال سے زائد ہو۔

   خشک اور پھٹی ہوئی جلد والے پیر

   یہ ممکنہ طور پر تھائی رائیڈ (سانس کی نالی کے قریب موجود غدود) میں مسائل کی علامت ہوسکتے ہیں خاص طور پر اس وقت جب پیروں کی نمی کا خیال رکھنا بھی بے کار ثابت ہو۔ جب تھائی رائیڈ غدود میں مسئلہ ہو تو وہ تھائی رائیڈ ہارمونز کو تیار کرنے سے قاصر ہوجاتا ہے جو کہ میٹابولک ریٹ، بلڈ پریشر، پٹھوں کی نشوونما اور اعصابی نظام وغیرہ کے لیے کام کرتے ہیں۔ ایک طبی تحقیق کے مطابق تھائی رائیڈ کے مسائل کے نتیجے میں جلد انتہائی خشک ہوجاتی ہے خاص طور پر پیروں کی جلد پھٹنے لگتی ہے اور حالت میں بہتری نہ آنے پر ڈاکٹر کا رخ کرنا ہی فائدہ مند ہوتا ہے۔

   ہاتھوں میں پسینہ

   اگر ہاتھوں پر بہت زیادہ پسینہ آتا ہے تو یہ تھائی رائیڈ امراض کے ساتھ ساتھ جسم سے ضرورت سے زیادہ پسینے کے اخراج کا مسئلہ بھی ہوسکتا ہے، جس میں پسینہ خارج کرنے والے غدود زیادہ متحرک ہوجاتے ہیں۔ اکثر افراد کو اس مسئلے کا سامنا جسم کے ایک یا 2 حصوں میں ہوتا ہے جیسے بغلیں، ہتھیلی یا پیر۔ ڈاکٹر اس کا معائنہ کرکے علاج تجویز کرسکتے ہیں۔

   سیاہ گومڑ یا تل

   عام طورپر بہت نمایاں سیاہ تل یا گومڑ جلد کے کینسر کی علامت ثابت ہوسکتے ہیں، جبکہ بریسٹ کینسر، مثانے اور گردے کے کینسر کا خطرہ بھی ان کی وجہ سے بڑھ جاتا ہے۔ ماہرین کے مطابق سورج میں کم گھومنا، متحرک رہنا، صحت بخش غذا اور الکحل سے دوری اس طرح کے جان لیوا کینسر سے بچنے کے لیے ضروری ہے۔مذید سوالات اور جوابات حاصل کرنے کے لیے نور ہیلتھ زندگی کے ساتھ ای میل اور پر رابطہ کر سکتے ہیں۔ noormedlife@gmail.com

Leave a Comment

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s